Home / Ghazals / Honge Juda Hum is Tarah Imkaan Toh Na Tha..

Honge Juda Hum is Tarah Imkaan Toh Na Tha..

Mohsin Naqvi Poetry 


Honge juda hum is tarah imkaan toh na tha,
ye dil kabhi bhi is tarah weeraan toh na tha. !

Jaise hua hai ab ke woh halaat se mere,
pahle kabhi woh is tarah anjaan toh na tha. !

Woh shehar se gaya hai toh raunaq bhi le gaya,
ye shehar is tarah kabhi sunsaan toh na tha. !

Ek Pyar ki jaageer ka maalik tha main kabhi,
pahle se yun hi be’sar-o saamaan toh na tha. !

Mohsin’ hum ne ishq mein paaya naffa bahut,
is kaarobaar mein koi nuqsaan toh na tha. !! 

Honge Juda Hum is Tarah Imkaan Toh Na Tha..
5 (100%) 1 vote

About Poetry One

~ ~ Poetry One -All the Best poetry from Urdu and Hindi world. Find Best, famous, memorable, and popular poems & poetry from top Shayars and poets from Pakistan, India. An evergreen collections of shayaries for Love, Life, Sadness & Romance ~ ~

Check Also

Bakhshe Phir Us Nigaah Ne Armaan Naye Naye..

Bakhshe phir us nigaah ne armaan naye naye mahsoos ho rahe hain dil-o jaan naye …

2 comments

  1. تو آشنائے جذبۂ الفت نہیں رہا
    دل میں ترے وہ ذوق محبت نہیں رہا
    پھر نغمہ ہائے قم تو فضا میں ہیں گونجتے
    تو ہی حریف ذوق سماعت نہیں رہا
    آئیں کہاں سے آنکھ میں آتش چکانیاں
    دل آشنائے سوز محبت نہیں رہا
    گل ہائے حسن یار میں دامن کش نظر
    میں اب حریص گلشن جنت نہیں رہا
    شاید جنوں ہے مائل فرزانگی مرا
    میں وہ نہیں وہ عالم وحشت نہیں رہا
    ممنون ہوں میں تیرا بہت مرگ ناگہاں
    میں اب اسیر گردش قسمت نہیں رہا
    جلوہ گہہ خیال میں وہ آ گئے ہیں آج
    لو میں رہین زحمت خلوت نہیں رہا
    کیا فائدہ ہے دعوئے عشق حسین سے
    سر میں اگر وہ شوق شہادت نہیں رہا

Leave a Reply

Your email address will not be published.